خوف کی علامت، بدنام زمانہ قاتل معصوم اور زیادتی کا شکار ہونے والی لڑکیوں کیلئے مسیحا بن گیا!!

" >

بنگلہ دیش (ویب ڈیسک) بنگلہ دیش میں ایسا شخص ہے جو صرف جنسی زیادتی کرنے والے لوگوں کو قتل کرتا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے بنگلی دیشی میڈیا میں ہرکولس کے نام سے جانے والے شخص نے ایک اورملزم کو قتل کر دیا ہے۔مذکورہ شخص صرف ان لوگوں کو ٹارگٹ بناتا ہے جن پر

عصمت دری کا الزام عائد ہو۔جمعہ کے روز پولیس کو ایک ایسے شخص کی لاش ملی جس پر ریپ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔لاش کے قریب سے پولیس کو ایک نوٹ ملا جس لکھا گیا تھا کہ میرا نام رکیب ہے اور میں نے پیروج پور کے ساتھ زیاتی کی اور یہ عصمت دری کرنے کی سزا ہے۔ ریپ کرنے والے ہرکولس سے بچ کر رہیں۔پولیس کو لاش سے متعلق مقامی لوگوں نے بتایا تھا۔میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا گیا تھا کہ رکیب اس گینگ ریپ کا حصہ تھا جس نے مدرسہ جانے والی ایک بچی کے ساتھ زیادتی کی تھی جو کہ اپنے دادا کے گھر جا رہی تھی۔رکیب وہ تیسرا ریپسٹ تھا جس کو ہرکولس نے بلکل اسی طرح سے قتل کیا جس طرح پہلے دو لوگوں کو قتل کیا۔تینوں افراد پر لڑکیوں سے زیادتی کرنے کا الزام عائید کیا گیا تھا۔تینوں کی لاشوں کے پاس سے ایک نوٹ ملا جس ہر ایک جیسی تحریر لکھی ملتی تھی جس میں ملزم اپنے نام کے ساتھ اپنے جرم کا اعتراف کرتا تھا۔رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ رکیب بنگلہ دیش کے دارلحکومت میں قانون کا طالب علم تھا اور پرائیویٹ یونیورسٹی میں زیر تعلیم تھا۔رقیب پر اپنے ساتھی سجل کے ساتھ مدرسے جانے والی لڑکی کے ساتھ زیادتی کا الزام عائد تھا۔دونوں نے لڑکی کے ساتھ 14جنوری کو زیادتی کی تھی۔سجل کو بھی 24جنوری کو قتل کیا گیا تھا جب کہ اس کے گلے میں ایسا ہی نوٹ ملا تھا جس پر درج تھا کہ میرا نام سجل ہے اور مجھے لڑکی کو ریپ کرنے کی سزا ملی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں