انگلینڈ میں زیادہ تنخواہ مل رہی تھی لیکن پاکستان کیوں آیا؟ پی سی بی کے نئے ایم ڈی وسیم خان کا جواب ہر پاکستانی کا سر فخر سے بلند کر دے گا

" >

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ کے نئے ایم ڈی وسیم خان نے کہا ہے کہ انگلینڈ میں مجھے تنخواہ زیادہ مل رہی تھی تاہم پاکستان میں کام کرنے کا بہت متمنی تھا،میری وفاداری پاکستان کیساتھ ہے،گراس روٹ سطح پر خرابیوں کی جڑ سسٹم میں ہے،عالمی سطح پر کامیابی میں ہماراتسلسل نہیں ہے

،ہم توجہ کر کے تبدیلی لائیں گے۔اتوار کویہاں پی سی بی کے ایم ڈی وسیم خان نے چیئرمین پی سی بی احسان مانی کے ہمراہ میڈیا سے با ت چیت کرتے ہوئے کہا کہ گراس روٹ سطح پر خرابیوں کی جڑ سسٹم میں ہے،عالمی سطح پر کامیابی میں ہماراتسلسل نہیں ہے ،ہم توجہ کر کے تبدیلی لائیں گے۔انہوں نے کہا کہ میرا کانٹریکٹ 3سال کاہے لیکن میں طویل مدت کیلئے یہاں رہناچاہتاہوں،نچلی سطح پرخرابیوں کی وجہ سسٹم میں خرابی ہے۔کرکٹ میں ہر ڈپارٹمنٹ کاریویوہوگا،اعلیٰ پروفیشنل ادارہ بنانا چاہتاہوں۔ دوسری طرف جنوبی افریقہ سے شکست کے سب ذمہ دارہیں، سرفراز احمد کو کپتان مقرر کرنے کے معاملے میں کسی کے ذہن میں کوئی ابہام نہیں تھا، جنوبی افریقہ میں کوئی بھی ایشین ٹیم ٹیسٹ سیریزنہیں جیت سکی، ڈریسنگ روم میں جو ہوتا ہے اسے ڈریسنگ روم میں ہی رہنا چاہیے ۔ان خیالات کااظہارقومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھرنے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ جنوبی افریقہ سے شکست کا ذمے دار کسی ایک کو نہیں ٹھہراؤں گا،ہم سب شکست کے ذمے دار ہیں،ڈریسنگ روم میں جو ہوتا ہے ڈریسنگ روم میں ہی رہنا چاہیے،میرا کہنا بہتری کے لیے ہوتا ہے۔انہوں نے کہاکہ پوری ٹیم سرفراز احمد کے ساتھ کھڑی ہے ، سرفراز احمد کی اصل ذمہ داری وکٹ کیپنگ ہے۔سرفراز احمد سے جو ہوا وہ غلط تھا اس نے معافی مانگی اور سزا بھی ہوگئی اب آگے بڑھنا چاہیے،

اپنا تبصرہ بھیجیں